قبائلی صحافی کا کیا قصور

قبائلی صحافی کا کیا قصور ۔۔۔۔قبائلی صحافیوں کو اپنا ادارہ تنخواہ نہیں دیتا ۔بغیر تنخواہ علاقے کی خدمت اور عوام کا آواز پہنچاتے ہیں ۔اگر قبائلی صحافی پولیٹیکل انتظامیہ سے پیسے لیتا ہے ۔تو لوگ ان کو مرعات یافتہ کہتے ہیں ۔اگر نیوز لگانے کا پیسہ لیتا ہے ۔تو بلیک میلر کہلاتا ہے ۔اگر سیاسی لیڈر سے بیان یا انٹر ویو کا پیسہ لیتا ہے ۔تو لفافہ جرنلسٹ کہلاتا ہے

۔اگر اپنا کاروبار کرتا ہے ۔تو کاروبار ی جرنلسٹ کہلاتا ہے ۔آپ ہی بتائیں کیا قبائلی جرنلسٹ کا خاندان اور بال بچے نہیں ہہوتے ۔کیاان کو تیار آسمان سے تیار رزق ملتا ہے ۔کیا قبائلی صحافیوں نے امن کے قیام میں قربانیاں نہیں دئے ہیں ۔ہمارے قبائل کے چودہ اور باجوڑ کے دو صحافی شہید ہہوچکے ہیں ۔ان کے خاندان اور بچوں پر کیا گزرتا ہے ۔کیا کسی نے کبھی ان کا پوچھا ہے ۔اب اگر ہم گورنر کو اپنے مسائل بیان کرتے ہیں ۔تو بعض خود غرض اور مفاد پرست لوگ کہتے ہیں ۔کہ صحافی کیو اس طرح کرتے ہیں ۔مجھے افسوس ہے ۔ایسے ذہنیت پر ۔اگر آپ کا صحافی مظبوط ہہوگا ۔تو وہ صحیح ترجمانی کرسکے گا ۔ورنہ مجبور صحافی علاقے کی خدمت کے بجائے اپنے مسائل حل کرنے میں مصروف ہہوگا ۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.