ڈی آئی خان میں غیرت کے نام پرنوجوان قتل

ICE-2-Died.jpg

رحمن اللہ نے 6 ماہ قبل اہل خانہ کی مرضی کے بغیر ماموند کی ایک لڑکی سے پسند کی شادی رچائی تھی۔

خیبرپختونخوا کے ضلع ڈیرہ اسماعیل خان (ڈی آئی خان) میں غیرت کے نام پر قتل کئے گئے نوجوان کی لاش آبائی علاقے باجوڑ منتقل کردی گئی ہے جہاں اُسے سپرد خاک کردیا گیا۔

باجوڑ کے علاقہ سالارزئی سے تعلق رکھنے والے 25 سالہ رحمن اللہ کو گزشتہ روز ڈیرہ اسماعیل خان میں اپنے گھر کے قریب چھریوں کے پے درپے وار کرکے قتل کردیا گیا تھا، مقامی افراد کے مطابق رحمن اللہ نے تقریباً 6 ماہ قبل ماموند کی ایک لڑکی سے اہل خانہ کی مرضی کے بغیر شادی رچائی تھی اور دونوں اپنے علاقے کو چھوڑ کر ڈیرہ اسماعیل خان منتقل ہوگئے تھے۔

دوسری جانب ڈیرہ اسماعیل خان میں پولیس کو رپورٹ درج کراتے ہوئے رحمن اللہ کی اہلیہ نے بتایا کہ ملزمان اُن دونوں کو قتل کرنے کے ارادے سے آئے تھے تاہم اُس نے بھاگ کر اپنی جان بچائی، مقدمہ میں ماموند سے تعلق رکھنے والے علی خان، بہادر خان اور زلی منیر کو نامزد کیا گیا ہے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ رحمن اللہ 15 روز قبل یہاں آیا تھا جس نے یہاں ایک ہوٹل میں ملازمت اختیار کررکھی تھی۔

رحمن اللہ کی لاش کو آج اُن کے آبائی علاقے سلارزئی منتقل کردیا گیا ہے جہاں اسے سپرد خاک کردیا گیا ہے جبکہ اُس کی اہلیہ کو پولیس نے اپنی حفاظت میں لے لیا ہے۔

TNN

شئیر کیجئے

PinIt

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.