امریکا کا رویہ جنگلی بھیڑیے جیسا ہے، ترک صدر

Urdagan-Turky-President.jpg

ترک صدر رجب طیب اردوان نے امریکا کی جانب سے لگائی جانے والی معاشی پابندیوں پر سخت ردعمل دیتے ہوئے واشنٹگن کے رویے کو جنگلی بھیڑیے سے تشبیہ دی ہے۔

ترک صدر طیب اردوان کا کرغزستان میں بزنس فورم سے خطاب کرتے ہوئے کہنا تھا کہ ترکی اور روس کے درمیان ڈالرز کے بغیر تجارت کی بات چیت چل رہی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ ہمیں آپس میں اپنی کرنسیوں میں تجارت کر کے امریکی ڈالر کی اجارہ داری کو ہمیشہ کے لیے ختم کرنے کی ضروت ہے۔

طیب اردوان کا کہنا تھا کہ واشنگٹن کا رویہ جنگلی بھیڑیے جیسا ہے اس لیے اس پر اعتبار نہیں کرنا چاہیے۔

انہوں نے کہا کہ امریکی ڈالر کا استعمال ہمیں نقصان پہنچاتا ہے لیکن ہم ہار نہیں مانیں گے اور فتح حاصل کریں گے۔

خیال رہے کہ ترکی اور روس دونوں ہی امریکا کی جانب سے لگائی گئی پابندیوں کے باعث شدید معاشی بحران کا شکار ہیں۔

ترکی میں امریکی پادری کی حراست کے بعد سے انقرہ اور واشنگٹن کے درمیان تعلقات کشیدہ ہیں اور گزشتہ ماہ امریکی ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے ترکی کی اسٹیل اور ایلومینیم پر لگائے گئے نئے ٹیکس کے باعث ترک لیرا کی قدر میں ڈالر کے مقابلے میں 40 فیصد کمی واقع ہوئی ہے۔

امریکی پابندیوں کے باعث گزشتہ ماہ روس کی کرنسی بھی دو سال کی کم ترین سطح پر پہنچ گئی تھی۔

شئیر کیجئے

PinIt

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.