گاڑیوں کی درآمد پر ٹیکس اب غیر ملکی کرنسی میں ادا کرنا ہوگا

پاکستانی شہریوں کو بیرون ملک سے گاڑیوں کی درآمد پر ٹیکس اب ڈالر میں ادا کرنا ہوگا جبکہ کپاس کی درآمد پر عائد ٹیکس پانچ ماہ کیلئے ختم کر دیا گیا۔


منگل 15 جنوری کو وزیر خزانہ اسد عمر کی زیر صدارت اقتصادی رابطہ کمیٹی کے اجلاس میں منظوری دی گئی۔ کمیٹی نے یہ فیصلے ملک میں زرمبادلہ کی تیزی سے گرتی صورت حال کے پیش نظر کیے۔

 

وزارت تجارت کی سمری کے مطابق گاڑی درآمد کرنے کیلئے ڈالرز کا انتظام بیرون ملک مقیم متعلقہ پاکستانی شہری کو خود یا پاکستان میں گاڑی وصول کرنے والے کو کرنا ہوگا۔ ٹیکس کے مساوی غیر ملکی کرنسی مقامی روپے میں تبدیل کرانے کا بینک سرٹیفکیٹ بطور ثبوت پیش کرنا ہوگا۔ اطلاق گفٹ یا پرسنل بیگج اسکیم کے تحت درآمد کی جانے والی نئی اور پرانی تمام گاڑیوں پر ہوگا۔

ای سی سی نے کپاس کی درآمد پر عائد کسٹمز ڈیوٹی، ایڈیشنل کسٹمز ڈیوٹی اور سیلز ٹیکس ختم کرنے کی منظوری بھی دیدی۔ اطلاق یکم فروری سے تیس جون تک ہوگا۔

ٹیکس خاتمے کی منظوری کا مقصد ٹیکسٹائل انڈسٹری کیلئے کاٹن کی وافر مقدار یقینی بنانا ہے۔ ایز آف ڈوئینگ بزنس میں بہتری کیلئے امپورٹ اور ایکسپورٹ پالیسی میں 2016 میں ترمیم کی منظوری بھی دیدی گئی۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.