قبائلی اضلاع:اختیارات کی نچلی سطح تک منتقلی تاریخی اقدام ہوگا۔ شہرام خان ترکئی

Sharam-Taraki-PTI.jpg

صوبائی وزیر بلدیات شہرام خان ترکئی نے کہا ہے کہ خیبرپختونخوا میں نیا بلدیاتی نظام متعارف کرایا جائے گا جسے قبائلی اضلاع  تک توسیع دی جائے گی۔

گزشتہ روز میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے وزیربلدیات نے کہا کہ قبائلی اضلاع میں نچلی سطح پر عوام کو درپش مسائل کے حل کیلئے اگلے چھ ماہ میں بلدیاتی انتخابات کے انعقاد کی تیاریاں جاری ہیں۔

شہرام خان ترکئی نے مزید کہا کہ بلدیاتی نطام حکومت نے ترقی اور مقامی سطح پر مسائل کے حل میں کلیدی کردار ادا کیا ہے اس لیے اگلے چھ ماہ میں قبائلی اضلاع میں بلدیاتی انتخابات کے انعقاد کی تیاریاں کی جارہی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ سابقہ فاٹا میں اختیارات کی نچلی سح تک منتقلی ایک تاریخی اقدام ہوگا۔

صوبائی وزیر نے اس امر کا اعادہ کیا کہ قبائلی اضلاع کو ملک کے دیگر ترقی یافتہ حصوں کے برابر لانے کیلئے پولیس سمیت تمام محکمہ جات میں نئی آسامیاں تخلیق کی جائیں گی۔

شہرام خان ترکئی کے مطابق قبائلی جرگہ سسٹم کو تمام سات اضلاع میں نئے نظام کا حصہ بنایا جائے گا۔

پشاور کے بیوٹیفیکیشن پلان بارے صوبائی وزیر نے بتایا کہ 5 ارب روپے پشاور کی خوبصورتی پر خرچ کیے جائیں گے اور قصہ خوانی بازار، خیبر بازار اور چوک یادگار جیسے تاریخی مقامات کی ازسر نو تزئین و آرائش کی جائے گی۔

شہرا خان ترکئی نے کہا کہ شہریوں کو طبع تفریح کی سہولیات کی فراہمی کیلئے بھی حکومت اقدامات کررہی ہے اور تفریحی مقامات کے قیام کیلئے شہر بھر میں 40 ڈمپنگ سائٹس کا خاتمہ کیا جاچکا ہے۔

خیال رہے کہ صوبائی حکومت فی الحال بلدیاتی نظام میں کچھ تبدیلیاں لارہی ہے۔

اس حوالے سے ضلع ناظمین کا کہنا تھا کہ صوبائی حکومت ضلعی کونسلیں ختم کرنا چاہتی ہے، انہوں نے حکومت پر زور دیا کہ مذکورہ اقدام کی بجائے ضلعی حکومتوں کو اختیارات تفویض کیے جائیں۔

ضلعی ناظمین نے حکومت کو خبردار کیا کہ ڈسٹرکٹ کونسلوں کا خاتمہ کیا گیا تو وہ پشاور ہائیکورٹ سے رجوع کریں گے۔

Share this post

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

scroll to top