31سال سے فعال گل وزیر مکتب کو سٹاف کی عدم فراہمی سے بند کردیا گیا

ملاگوری (نامہ نگار) لوڑہ مینہ میں 31سال سے فعال گل وزیر مکتب کو سٹاف کی عدم فراہمی سے بند کردیا گیا۔
اس حوالے سے میڈیا کو تفصیلات بتاتے ہوئے مقامی بچو ں کے والدین نے بتایا کہ ضلع خیبر کی سب تحصیل لوڑہ مینہ میں واقعہ گل وزیر کلے میں آپریل 1988ء سے شروع کیا گیا تھا۔ جس میں 200طلباء زیور تعلیم سے آراستہ ہورہے تھے۔
مذکورہ مکتب کو محکمہ تعلیم ضلع خیبر نے تدریسی عملہ کو ختم کرکے سکول کو سٹاف کی کمی کا بہانہ بنا کرگذشتہ 2ہفتہ سے بند کرکے سینکڑوں بچوں کو تعلیم سے محروم کر دیا ہے۔والدین کا کہنا ہے کہ مکتب کی بندش سے مقامی طلباء سے زیور تعلیم سے محروم ہوگئے ہیں۔
انہوں نے کہا کہ مقامی بچوں کو گورنمنٹ ہائی سکول لوڑہ مینہ بھی فاصلے پر ہے اور ساتھ ہی ہائی سکول میں طلباء کی تعداد بھی ذیادہ ہے۔ مقامی والدین نے محکمہ تعلیم ضلع خیبر کے اس غلط فیصلے کو شدید تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ محکمہ تعلیم کے حکام بالا سے غلط فیصلوں کی وجہ سے ملاگوری کے سرکاری تدریسی مراکز میں پڑھائی شدیدمتاثر ہورہی ہے۔
انہوں نے مطالبہ کیا کہ گل وزیر مکتب کو سٹاف کی فوری فراہمی کر دی جائیں تاکہ بچے تعلیم حاصل کرکے ملک و قوم کا نام روشن کرسکیں۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.