لاہور: داتا دربار کے قریب خودکش حملہ، اہلکاروں سمیت 10 افراد شہید

لاہور-داتا دربار کے باہر پولیس ناکے پر دھماکے میں 5 پولیس اہلکاروں سمیت 10 افراد شہید جبکہ 30 افراد زخمی ہوئے، ابتدائی تحقیقات کے مطابق حملہ خودکش تھا۔
پولیس کے مطابق دھماکا ایلیٹ فورس کی گاڑی کے قریب ہوا، ایلیٹ فورس کی گاڑی داتا دربار کے گیٹ نمبر دو کے قریب کھڑی تھی، دھماکے سے ایلیٹ فورس کی گاڑی مکمل تباہ ہوگئی۔
دھماکے میں شہید ہونے والوں میں 5 پولیس اہلکار، ایک سیکیورٹی گارڈ اور ایک راہگیر شامل ہیں۔ داتا دربار کے داخلی و خارجی دروازے بند کر دیئے گئے ہیں، زخمیوں کو میو ہسپتال لایا گیا ہے جہاں متعدد زخمیوں کی حالت نازک بتائی جا رہی ہے۔
خودکش بمبار نے 8 بج کر 54 منٹ پر ایلیٹ فورس کی گاڑی کو نشانہ بنایا، سیف سٹی کیمرے سے دہشت گرد کی نشاندہی ہو گئی۔ وزیراعلی پنجاب کو اعلیٰ سطح اجلاس میں فوٹیج دکھا دی گئی۔
شلوار قمیص میں ملبوس، پاؤں میں سینڈل پہنے 15، 16 سالہ خودکش بمبار داتا دربار سے متصل گلی سے باہر آیا، ناکے پر کھڑی ایلیٹ فورس کی گاڑی کی ڈرائیونگ سیٹ کے قریب پہنچ کر اپنے آپ کو دھماکے سے اڑا لیا۔ گاڑی داتا دربار کے گیٹ نمبر دو کے سامنے سیکیورٹی پر مامور تھی۔
دھماکا ہوتے ہی گاڑی تباہ ہو گئی، ہر طرف دھواں پھیل گیا اور افرا تفری مچ گئی۔ دھماکے کے بعد داتا دربار کے داخلی اور خارجی دروازے بند کر دیئے گئے۔ اطلاع ملتے ہی پولیس اور فرانزک ٹیم نے موقع پر پہنچ کر شواہد اکھٹے کئے، زخمیوں کو ہسپتال منتقل کیا، افسوس ناک واقعے کے پیش نظر ڈاکٹروں کی چھٹیاں منسوخ اور ہسپتالوں میں ایمرجنسی نافذ کر دی گئی۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.