خیبرپختونخوا سے دو نئے پولیو کیسز کی تصدیق

0

پشاور: خیبر پختونخواہ کے ضلع بنوں اور لکی مروت سے دو نئے پولیو کیسز رپورٹ ہوئے ہیں، جن کی تصدیق قومی ادارہ صحت نے ہفتہ کے روز کی۔ ان دو پولیو کیسز کے ساتھ خیبر پختونخوا میں کل پولیو کیسز کی تعداد 66 ہو گئی۔
تفصیلات کے مطابق ، یونین کونسل بیست خیل ، تحصیل سرائے نورنگ، ضلع لکی مروت کی رہائشی 3 ماہ کی بچی اور یو-سی جانی خیل، ضلع بنوں کے رہائشی 10 ماہ کے بچے کے فضلہ کے نمونوں میں پولیو وائرس کیتصدیق ہوئی۔
ضلع بنوں کے رہائشی 10 ماہ کے بچے کو حفاظتی ٹیکاجات کی صرف ایک خوراک، جبکہ 3 ماہ کی لکی مروت سے تعلق رکھنے والی بچی کو حفاظتی ٹیکاجات کی کوئی بھی خوراک نہیں دی گئی تھی۔
کوآرڈینیٹر ایمرجنسی آپریشن سینٹر خیبرپختونخوا عبدالباسط نے کہا کہ یہ انتہائی پریشان کن اور افسوسناک بات ہے کے دو مزید بچے پولیو وائرس کی وجہ سے عمر بھر کے لیے معذور ہوئے۔ انہوں نے کہا باوجود اس کے کہ بچوں کو معذوری سے تحفوظ کے لیے ویکسین گھر گھر پہنچائی بھی جاتی ہے مگر والدین افواہوں اور غلط مہمیوں کی وجہ سے اپنے بچوں کو پولیو قطرے نہیں پلواتے، جو ان بچوں کی معذوری کے پورے پورے ذمہ دار ہیں۔
انہوں نے بتایا کہ صوبہ میں پولیو کیسزکیتعداد 66 ہوچکی ہے جن میں سےبنوں سے 50 اور لکی مروت سے 18 پولیو کیس رپورٹ ہوئے ہیں۔
کوآرڈینیٹر عبدالباسط نے کہا کہ صوبہ کے جنوبی اضلاعخصوصاً بنوں ڈویژن میں وائرس کی گردش جاری ہے جو کسی بھی کمزور اور ویکسین سے محروم یا رہ جانے والے بچوں کی معذوری کا سبب بنتا ہے۔
انہوں نے کہا کہ اس مسئلے کا واحد حل ہر بچے کو ہر انسداد پولیو مہم کے دوران پولیو قطرے پلوانے کی یقین دہانی ہے، تاکہ انہیں ساری عمر کی معذوری سے بچایا جا سکےاور پولیو وائرس کی گردش کو روکا جا سکے۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.