موت سے پہلے موت کی تیاری کریں

0

موت سے پہلے موت کی تیاری کریں ، تحریر: محمد جمیل

بہادر خان اج رات کھانے کے بعد سونے کیلئے بستر پر لیٹ گئے.ان کی طبعیت اچھانک بگڑ گئی.بائیں جانب اس کے کندے اور بازؤ میی تکلیف دہ درد ابھرنے لگا.اس کی سانسیں ٹوٹنے لگی.دل کی دھڑکنیں تیز ھونے لگی. اس کی گھبرا ھٹ اخری حدو کو چھو رھی تھی.پسینہ اس کے ماتے پر شبنم کی طرح بہنےلگا.

بہادر خان نے محسوس کیا کہ وہ ذندگئی کی اخری سانسیں لے رھا ھے

deth pic

اج وہ اکیلا بستر پر پڑا اپنی ذندگی کی اخری سانسیں لے رھا تھا.اج اس کی خدمت کیلئے گھر میں کوئی نہیی تھا.اس کی اولاد اس کی تکلیف سے بے نیاز ھوکر اپنے عیاشیو میں مگن تھے.

جس اولاد کیلئے بہادر خان نے حرام اور حلال کا فرق کئے بغیر بہت کچھ جمع کیا تھا اج وہ اپنے باپ سے بے خبر ھوکر اپنے عیاشیو میی مصروف ھے.بہادر خان کو اپنے کرتوت ٹیپ ریکاڈر کی اپنے ارد گرد منڈلا رھے تھے.

جو مظالم اس نے اپنے رعایا پر روا رکھے تھے اج وہ ان کے ذہن سے چمٹ کر اپنا بدلہ لے رھے تھے. بہادر خان اج اللہ کے حضور گڑا گڑا کر اپنے گناھو کی معافی مانگ رھا تھا .

صبح جب ان کا پوتا اس کے دادا کے کمرے میی گیا تو اپنے دادا کو مردہ پاکر رونے لگا اور اس طرح پورہ گھرانہ اس کے گرد جمع ھوا.

اج ان کے موت کا دسوا سالگرہ ھے. ایک پوتا اپنے باپ سے سوال کرتا ھے کہ ھمارا دادا کس قبرستان میی دفن ھے لیکن بدقسمتی سے وہ اپنے بیٹے کو جواب دینے سے قاصر ھے کیونکہ وہ اپنے باپ کا قبر بھول گیا ھے.

اس لئے عرض کی جاتی ھے کہ اپنے اولاد کیلئے حرام اور حلال کا فرق کئے بغیر مال جمع نہ کریں بلکہ ان کی اچھی تربیت کریں تاکہ مرنے کے بعد اپکی اولاد اپ کو دعائیی دیے.اللہ تعالی ھم سب کو اپنے بڑو کی خدمت کرنے کی توفیق دیں.آمین

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.