1970سے قائم پوسٹ آفس میں عملہ کی کمی کیوجہ سے ایجنسی کے 20لاکھ عوام متاثر

0

لوکل اور وویلج پوسٹ مین نہ ہونے کیوجہ سے عوام کو دستاویزات بر وقت نہیں پہنچ سکتے۔عمارت بوسیدہ ہونے کیوجہ سے قیمتی سٹیشنری اور ڈاک ناکارہ ہو رہا ہے

باجوڑ ایجنسی میں 1970سے قائم پوسٹ آفس قائم ہے لیکن ان میں سٹاف کی کمی کیوجہ سے ایجنسی کے عوام کو شدید مشکلات کا سامنا ہے دوسری طرف عمارت نہایت بوسیدہ ہو چکا ہے اور بارش ہونے کی صورت میں قیمتی ریکارڈ ضائع ہونے کا خدشہ رہتا ہے ڈاکخانے میں عرصہ دراز سے ڈیوٹی دینے والے پوسٹ ماسٹر اکرام اللہ جو نہایت محنتی اور ڈیوٹی فل شخص ہے کا تبادلہ کرکے عوام کو مزید امتحان میں ڈال دئیے گئے ہے پوسٹ آفس میں سٹاف کی کمی ہے

post offic bj

لوکل اور وویلج پوسٹ مین نہ ہونے کیوجہ سے ٹیلفون بل،رول نمبرسلپ،تنخواہوں کے چک اور دیگر دستاویزات کسٹمرز کو بروقت نہیں پہنچ سکتے ہیں اس کے علاوہ پوسٹ آفس میں دستاویزات کو محفوظ بنانے اور اپنے ساتھ ریکارڈ رکھنے کیلئے اس جدید دور میں بھی کمپیوٹر اپریٹر موجود نہیں ہے باجوڑ کے عوام نے ڈائیریکٹر جی ۔پی۔ او GPO) ( پوسٹ ماسٹر جنرلPMG)) اور ڈویژنل سپرنٹنڈنٹ سے پر زور مطالبہ کیا ہے کہ پوسٹ ماسٹر اکرام اللہ کا تبادلہ فوری طور پر منسوخ کیا جائے ایجنسی کے پوسٹ آفس کیلئے جدید بلڈنگ بنا دیا جائے اور ان کو جی،پی ،او کا درجہ دیا جائے۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.