نحقی ٹنل کو ٹریفک کے لئے جلد از جلد کھول دیا جائے

0

نامہ نگار( عبداللہ ملک )مہمند ایجنسی میں دو سال پہلے شروع کیا جانے والا نحقی ٹنل تاحال ٹریفک کے لئے نہیں کھول دیا گیا جس کی وجہ سے عوام کو شدید مشکلات کا سامنا ہے۔ دوسری طرف FWOنے نحقی تا مامدگٹ روڈ پر ایک سال سے کام بند کردیا ہیں جس کی وجہ سے سڑک کھنڈر کا منظر پیش کرہا ہے۔ روڈ کی خستہ حالی کی وجہ سے عوام کو شدید مشکلات کا سامنا ہے اور وہ چالیس منٹ کا فاصلہ گھنٹوں میں مکمل کرنے پر مجبور ہیں۔ ایک طرف اگر اس روڈ پر گاڑیوں کی حالت خراب ہوتی جارہی ہیں تو دوسری طرف بیمار اور بزرگ لوگ شدید مشکلات کا شکار ہیں۔
عوامی نیشنل پارٹی کے صدر نثار خان مومند اور اور جنرل سیکرٹری خضرت خان مومند نے ایک اخباری بیان میں کہا کہ نحقی ٹنل پر تعمیراتی کام بہت پہلے مکمل ہوچکا ہے لیکن تاحال ٹریفک کے لئے نہیں کھول دیا گیا جس کی وجہ سے بے پناہ مسائل کا سامنا ہیں۔ انھوں نے مطالبہ کیا کہ نحقی ٹنل کھولنے سے اگر ایک طرف فاصلے کم ہونگے تو دوسری طرف ماربل لوڈ گاڑیوں کو اتنی طویل چڑھائی سر کرنا بھی نہیں پڑے گا اور وقت کی ضیاء کرنے سے بھی بچا جاسکے گا۔
صدر اے این پی نے مزید کہا کہ نحقی ٹنل کھولنے اور روڈ کی تعمیر نو سے باجوڑ، دیر اور دیگر دور افتادہ علاقوں کو پشاور انا جانا اسان ہوگا جس سے تجارت اور خوشحالی کو فروغ حاصل ہوگا۔
نحقی کنڈاو سے مامدگٹ تک مین روڈ پر FWOکا شروع کردہ تعمیراتی کام نامعلوم وجوہات کی بناہ پر روک دیا گیا ہے اور پرانی سڑک کو مشینری سے اُکھاڑ کر کام کو ادھورہ چھوڑ دیا گیا ہے جو عوام کے لئے انتہائی تکلیف دہ ہیں۔اے این پی کے راہنماوں نے پر زور مطالبہ کیا کہ وفاقی حکومت نحقی سے مامدگٹ تک مین روڈ کی تعمیر نو کے لئے انے والے بجٹ میں فنڈز مختص کریں تاکہ عوام کو نقل و حرکت میں اسانی ہو۔
یاد رہے کہ بعض زرایع سے معلوم ہوا کہ بین القوامی تعاون سے بننے والا یہ منصوبہ تعمیراتی کام کے لئے FWOکے حوالے کیا گیا تھا ، کام کی شفافیت پر DONORکو تحفظات تھے جس پر اُنھوں نے فنڈ کی ٹرانسفر روک دی تھی جس کی وجہ سے یہ کام ادھورہ رہ گیا تھا ۔اور تاحال اس منصوبے پر کام شروع نہیں کیا گیا۔ سابق گورنر خیبر پختون خوا سردار مہتاب عباسی نے دورہ مہمند ایجنسی کے موقع پر کہا تھا کہ انے والے سالانہ ADP میں اس منصوبے کے لئے رقم مختص کی گئی ہیں جس کے بعد یہ منصوبہ مکمل کیا جائے گا مگر تاحال اس پر کام شروع نہیں کیا گیا۔
راستے پر سفر کرنے والے مسافروں کا کہنا تھا کہ انتظامیہ تصاویری جھلکیوں کے لئے اکر غائب ہوجاتے ہیں مگر مسائل جو کہ تو ہیں اور ابھی تک اس منصوبے کی تعمیر نو پر کوئی کام شروع نہیں کیا گیا

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.