مہمندایجنسی میں بجلی کی طویل لوڈ شیدنگ اور کم وولٹیج کے خلاف ANP کا احتجاج

0

نامہ نگار (عبداللہ ملک) مہمندایجنسی میں بجلی کی طویل لوڈ شیدنگ اور کم وولٹیج کے خلاف ANP کا احتجاج
احتجاج دوسرے روز بھی جاری رہا نثار مومند کے نگرانی میں میاں منڈی میں احتجاجی ریلی بازار میں مارچ ۔واپڈا کیخلاف نعرہ بازی۔ایک ہفتے کا ڈید لائن۔
تحصیل حلیمزئی کے اہم تجارتی مرکز میاں منڈی میں بجلی کی مسلسل طویل لوڈ شیڈنگ کے خلاف ANPمہمند ایجنسی کے صدر نثار مومند کی زیر نگرانی ایک احتجاجی مظاہرہ ہوا جس میں مظاہرین نے ایک گھنٹے کیلئے پشاور باجوڑ روڈ کو بند کیا ۔
مظاہرین نے سڑک پر مارچ کیا اور واپڈا کے خلاف نعرہ بازی کی ۔بعد میں احتجاجی جلسے سے اے این پی کے صدر نثار مومند نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ فاٹا کے ساتھ سوتیلی ماں جیسا سلوک کیا جاتا ہے۔کیونکہ آئین کے ارٹیکل18کے مطابق ورسک ڈیم کے بجلی پر سب سے پہلے مہمند ایجنسی کے لوگوں کا حق ہیں۔لیکن اس سے ایجنسی کو ایک لائن بھی میسرنہیں کیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ فاٹا کے خلاف واپڈا بل کی وصولی کا مطالبہ کرتا ہے۔ لیکن فاٹا پر ایک روپے کے بقایاجات بھی نہیں ہے۔ نثار مومند نے کہا کہ غلنئی گرڈ سٹیشن میں 30سالوں سے دو اہلکاتعینات ہیں۔ جس میں ایک کا تعلق افغانستان سے ہے۔انکو فوری طور پر تبدیل کیا جائے۔انھوں نے کہا کہ واپڈہ اہلکار فیکٹریوں کو الگ لائن دیکر ایجنسی میں 22گھنٹے لود شیڈنگ ختم کریں ورنہ سخت احتجاجی تحریک شروع کرینگے۔
انہوں نے ایک ہفتے کا دیڈ لائن دیا کہ اگر ایک ہفتے میں لود شیڈنگ ختم نہیں کیا گیا تو غلنئی گرڈ سٹیشن کا محاصرہ کرینگے اور ورسک ڈیم پر بھی لشکر کشی کرینگے۔جس کی تمام تر ذمہ داری واپڈا اور پولیٹیکل انتظامیہ پرہوگی۔
احتجاج میں عوامی نیشنل پارٹی کے کارکنوں کے علاوہ علاقے کی عوام لوگوں نے بھی شرکت کی۔جبکہ اس دوران ایک گھنٹے تک مہمند باجوڑ روڈبند رہا۔یاد رہے کہ کل بھی اے این پی اور پی پی پی کے کارکنوں نے یکہ غنڈ بازار میں بجلی لوڈ شیڈنگ کے خلاف احتجاج کیا تھا اور احتجاج کے دوران یکہ غنڈ بازار اور پشاور باجوڑ روڈ کوایک گھنٹے تک بند تھا

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.