جمرود پولیٹکل انتظامیہ بااثر افراد کے منشیاتی تنازعات لاتعلقی کے باوجود حل کر رہے ہیں۔ لقمان

0

جمرود ( تاجدار عالم ) اگر ایک طرف جمرود پولیٹکل انتظامیہ نے ہر قسم منشیات اور سودی کاروباری تنازعات کے مقدموں کے حل سے لاتعلقی کے احکامات جاری کیے ہیں تو دوسری طرف سرحد پار کئے گئے منشیات کے تنازعات کو پولیٹکل انتظامی امور کے ذریعے حل کر رہے ہیں۔ جمرود پولیٹکل انتظامیہ بااثر افراد کے اثر و رسوخ کے بناء پر بے گناہ گل محمد اور عبدالمجید کو حوالات میں بند کر دیے ہیں۔ ان خیالات کا اظہار لقمان اور راز محمد نے جمرود میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ فریقین گل نواز اور میر نواز نے گل محمد اور عبدالمجید پر کویت کے جیل میں منشیات کے کاروبار میں تاوان دلانے کا جھوٹا دعویٰ کیا تھا جسمیں کئی سال گزرنے کے باوجودفریقین نے اثر و رسوخ کا استعمال کر کے دونوں بھائیوں کو جمرود پولیٹکل انتظامیہ کے ذریعے حوالات میں بند کیے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ گل محمد ٹیکسی ڈرائیور جبکہ عبدالمجید جمرود بازار میں دوکانداری کرتا ہے اور ہر قسم کے حرام روزگار سے توبہ گار ہو کر اب حلال روزی کما کر اپنے خاندان کا پیٹ پالتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ جمرود پولیٹکل انتظامیہ نے واضح احکامات جاری کیے ہیں کہ منشیات اور سودی کاروبار کے تنازعات پولیٹکل انتظامیہ حل نہیں کرینگے لیکن اسکے باجود انہوں نے منشیات کے جھوٹے دعویٰ کے بناء پر ہمارے بے گناہ افراد کو گرفتار کیے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ اگر حکومت واقعی میں منشیات و سودی کارودبار کے تنازعات کے حل میں سنجیدہ ہے تو بھر ہمارے بھی لوگوں پر کروڑوں روپے واجب الادا ہیں پھر ہمیں بھی ان لوگوں سے ہماری رقم دلا ئی جائے۔ انہوں نے خیبرپولیٹکل ایجنٹ اورآئی جی ایف سی سے درخواست کی ہے کہ مذکورہ افراد کو جلد از جلد رہا کیے جائے بصورت دیگر بچے و عورتوں سمیت پاک افغان شاہرہ پر احتجاج کیا جائے گا۔
دوسری جانب جمرود میں نامعلوم مسلح افراد نے عبدالغفار کو موت کے گھاٹ اُتار دیا تحصیل جمرود کے علاقہ تختہ بیک کے قریب نا معلوم مسلح افراد نے ملانو ں کلئے کے جواں سال رہائشی عبدالغفار ولد محمد جان شیر خان خیل قتل کر کے موقع سے فرار ہونے میں کامیاب ہو گئے۔ عبدالغار کے پر اسرار قتل سے نہ صرف خاندان والو ں پر اس با برکت رمضان کے مہینے میں قیامت طاری ہوا بلکہ پورا گاؤں غم سے نڈال تھا۔ لواحقین نے میڈیا کو بتایا کہ مقتول عبدالغفار صبح سویرے گھر سے کام کے سلسلے میں نکلے کہ راستے میں ہی نامعلوم مسلح افراد نے انکو موت کے گھاٹ اتار دیا۔ مرحوم کا نمازے جنازہ انکے آبائی گاؤں میں ادا کر کے سپرد خاک کر دیا گیا۔ جمرود پولیٹکل انتظامیہ نے نا معلوم افراد کے خلاف قتل کا مقدمہ درج کر کے مزید تحقیقات شروع کر دی۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.