علمائے کرام ممبر و محراب کے زریعے امن، محبت و آشتی کا درس دیں، راجہ نعیم اکبر

0

باجوڑ :ضلع باجوڑ میں فرقہ واریت کا نہ ہونا باعث اطمینان ہے ان خیالات کا اظہار سیکٹر کمانڈر نارتھ راجہ نعیم اکبر نے علمائے کرام کے 16 رکنی وفد کے ساتھ بات چیت کرتے ہوئے کیا انہوں نے کہا کہ مجھے اس بات پر بے حد خوشی ہوئی کہ یہاں پر فرقہ واریت کا وجود نہیں ہے ہم سب ایک خدا، ایک رسول اور ایک قرآن کے ماننے والے ہیں تو پھر اختلافات اور ایک دوسرے کو کافر اور مرتد کہنا کو نسا اسلام ہے.

فروعی اختلافات کو ہوا دینے والے اسلام کی خدمت نہیں بلکہ امت کو لڑا کر عوام میں نفرتیں بانٹتے ہیں اسلام کا لبادہ اڑھنے والے علماء سوء غیر مسلموں کے ایجنڈے پر عمل پیرا ہو کر ملک میں بد امنی اور غیر یقینی صورتحال پیدا کر رہے ہیں عشق رسول کے نام پر ملک میں گھیراؤ جلاؤ کرنے والے اپنے ہی دھرتی کو معاشی طور پر مفلوج کر کے بھکاری بنانے کے درپے ہیں ہم کسی صورت بد امنی اور اسلام کے نام پر فرقہ واریت برداشت نہیں کر سکتے .

قبائلی عوام ہمارے بازوئے شمشیر ہیں آزادی کشمیر میں غیور پختون قبائل نے پاک فوج کے ساتھ مل کر ہمارے ازلی دشمن کو دن میں تارے دکھا کر ان کے قوت کو پاش پاش کیا مولانا ذاکر اللہ، مولانا فضل الحق، مولانا طارق جمیل، مولانا عبد اللہ، مفتی احسان الحق، مولانا علی سردار ودیگر علماء نے سیکٹر کمانڈر باجوڑ کا قبائلی عوام کے ساتھ مشفقانہ رویہ اور مختلف چیک پوسٹوں پر نرمی جیسے اقدامات کو سراہتے ہوئے ہر ممکن تعاون کا یقین دلایا۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.