قبائلی اضلاع کی لیویز اور خاصہ دار فورس پولیس میں ضم

0

اورکزئی کے 1043، باجوڑ کے 2441، بیٹنی کے 425اوردرہ آدم خیل کے 618اہلکار شامل ہیں
مجموعی طور پر 4 ہزار 517 لیویز و خاصہ اہلکار پولیس کا حصہ بن گئے ،انضمام کا نوٹیفکیشن جاری کر دیا گیا

پشاو: قبائلی اضلاع کی لیویز وخاصہ دار فورس کو پولیس میں ضم کردیا گیاہے،محکمہ پولیس نے قبائلی ضلع اورکزئی ، باجوڑ ، بیٹنی اور درہ آدم خیل کی لیویز و خاصہ دار فورس کو پولیس میں ضم کرنے کا نوٹیفکیشن جاری کر دیا۔جاری نوٹیفیکیشن کے مطابق اورکزئی کے 1043 ، باجوڑ کے 2441 ، بیٹنی کے 425 اوردرہ آدم خیل کے 618 اہلکار پولیس میں شامل کر دئیے گئے ہیں ۔

 اعلامیہ کے مطابق مجموعی طور پر 4 ہزار 517 لیویز و خاصہ اہلکار پولیس کا حصہ بن گئے ۔ انسپکٹر جنرل خیبرپختونخوا پولیس ثناء اللہ عباسی کے مطابق لیویز وخاصہ فورس کو پولیس میں ضم کرنے کا وعدہ پورا کردیا ہے ، باقی رہ جانے والے لیویز و خاصہ دارفورس کے اہلکاروں کوبھی پولیس میں ضم کردیا جائے گا ۔لیویز و خاصہ داروں کو پولیس کی طرز پر اعلی تربیت دی جائے گی ۔پولیس قبائلی اضلاع میں انسانی حقوق کا تحفظ کرینگے جس سے امن و امان کی صورتحال مزید بہتر ہوگی،

واضح رہے کہ فاٹا انضمام کے بعد خیبرپختونخوا حکومت نے قبائلی اضلاع کے لیویز اور خاصہ دار فورس کو پولیس میں ضم کرنے کا وعدہ کیا تھا جو کہ اب حکومت نے وعدہ پورہ کرتے ہوئے لیویز اور خاصہ دار فورس کو پولیس میں ضم کردیا۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.